سلطان علی ابن مسعود ابن محمود غزنوی

اُمراء کی رائے سے وہ تخت نشین ہوا، مگر جب عبد الرزاق بن احمدمیمندی سیستان سے بسط اور اسفراز 42؎ کے درمیان قلعہ تک پہنچا اور اسے معلوم ہوا کہ سلطان مودود کے حکم سے اس قلعہ میں عبدالرشید ابن محمود قید ہے تو وہ اسے قیدخانے سے نکال لایا اور تخت سلطنت پر بیٹھا دیا۔ علی کی حکومت کو …

مزید پڑھیں

سلطان مسعود بن مودود بن مسعود بن محمود غزنوی

از منتخب التواریخ مسعود بن مودود صرف تین سال کا بچہ تھا مگر علی بن ربیع نے اپنی حکمت عملی سے اسے تخت پر بٹھایا، مگر یہ صورت حال زیادہ دنوں تک قائم نہ رہ سکی۔ اس کی حکومت کے قیام کو صرف پانچ ماہ ہوئے تھے کہ لوگوں نے اس کے چچا علی کو بادشاہ تسلیم کرلیا۔

مزید پڑھیں

سلطان مودود بن مسعود بن محمود غزنوی

از منتخب التواریخ بامیان میں اپنے باپ کے قتل کے بعد سلطان مودود وزیروں اور امیروں کی متفقہ رائے سے تخت نشین ہوا۔ باپ کے قتل کا انتقام لینے کے لیے اس نے ماریکلہ کی جانب کوچ کرنے کا ارادہ کیا مگر ابونصراحمد بن محمد بن عبد الصمد نے اسے اس کام سے باز رکھا اور غزنی سے لے گیا۔ …

مزید پڑھیں

سلطان محمد بن محمود غزنوی لقب جلال الدولہ

ازا منتخب التواریخ مذکورہ سن421ھ میں اپنے باپ کی وصیت کے مطابق اور اسی کے ایک رشتہ دار ابن ارسلان کی رائے سے غزنی میں تخت سلطنت پر جلوہ افروز ہوا۔ ابھی ڈیڑھ ماہ ہی گزرا تھا کہ امیر ایاز نے بعض دوسرے ملازمین کے ساتھ مل کر سازش کی اور وہ سب کے سب شاہی اصطبل کے گھوڑوں پر …

مزید پڑھیں

سلطان علاؤالدین مسعود شاہ بن رکن الدین فیروز شاہ

اپنے چچا سلطان ناصر الدین محمد اور سلطان جلال الدین جو نسب میں سلطان شمس الدین التمش سے تھے ان سب کی رائے سے وہ تخت نشین ہوا۔ اگر چہ و ہ اس وقت قید خانہ میں تھا مگر عزالدین بلبن کے بڑے بیٹے نے اپنی ایک روز کی تخت نشینی کے دوران ہی اس کی رہائی کا اعلان کردیا …

مزید پڑھیں

سلطان معزّ الدین بہرام بن شمس الدین التمش

از منتخب التواریخ سلطان رضیہ کے بعد سلطان معزّالدین بہرام تخت نشین ہوا اور دہلی پہنچا۔ اس وقت ملک اختیار الدین التونیہ حاکم تبرہندہ نے سلطان رضیہ کے ساتھ عقد کر کے تمام زمینداروں، جاٹوں اور کھوکھروں کی جماعت اور ان کے امراء میں سے چند ایک کو اپنا ہم نوا بنالیا تھا اور ان کی مدد اور اعانت سے …

مزید پڑھیں

سلطان رضیہ بنت سلطان شمس الدین التمش

از منتخب التواریخ 634ھ1236/ء میں تخت پر بیٹھی اس نے اپنے پیش نظر عدالت وانصاف کا مدعا رکھا اور ان مشکل کاموں کو حل کرنے کی کوشش کی جس میں پیچیدگیاں پیدا ہوگئیں تھیں۔ کرم ورزی کا وہ طریق کار جو عورتوں کے لیے اسی طرح معیوب تھا جس طرح مردوں کے لیے بخل۔ سلطان رضیہ نے اس پر عمل …

مزید پڑھیں

سلطان رکن الدین فیروز شاہ بن شمس الدین التمش

از منتخب التواریخ اپنے والد کے عہد حکومت میں سطان رکن الدین فیروز شاہ چند مرتبہ بدایوں کے اضلاع کا مختار رہا تھا۔ اس کے بعد چتر شاہی اور عصائے اختیارات بھی حاصل کیا تھا اور جب لاہور کے سیاہ و سفید کا مالک تھا تو اس کی حیثیت ولی عہد کی تھی۔ سلطان التمش کے انتقال کے بعد تمام …

مزید پڑھیں

سلطان شمس الدین التمش

از منتخب التواریخ 607ھ1210/ء میں دہلی کے تخت پر جلوہ افروز ہوا۔ التمش76؎ کی وجہ تسمیہ یہ ہے کہ اس کی پیدائش چاند گرھن کی شب کو ہوئی اور تُرک ایسے بچہ کو التمش کہتے ہیں۔ اس کا باپ قبائل ترکستان کا سردار تھا۔ اس کے رشتہ دار ایک روز التمش کو سیر کے بہانے باغ میں لے گئے اور …

مزید پڑھیں

سلطان معزّالدین محمدسام المعروف بہ سلطان شہاب الدین محمد غوری

از منتخب التواریخ معز الدین کا بڑا بھائی سلطان غیاث الدین غوری، عراق اور خراسان کا بادشاہ تھا۔ سلطان شہاب الدین غوری اسی کے نائب السلطنت ہونے کی حیثیت سے غزنی میں تخت نشین ہوا۔ اپنے نام کا خطبہ پڑھوایا اور سکہّ جاری کیا نیزاپنے بڑے بھائی کے حکم سے ہندستان پر لشکر کشی کی اورنعرۂ غزوہ اور جہاد بلند …

مزید پڑھیں