admin

سفیر لیلی۔ ۱

Ali akbar natiq

علی اکبر ناطق سفیر لیلیٰ یہی کھنڈر ہیں جہاں سے آغاز داستاں ہے ذرا سا بیٹھو تو میں سناؤں فصیل قریہ کے سرخ پتھر اور ان پہ اژدر نشان برجیں گواہ قریہ کی عظمتوں کی چہار جانب نخیل طوبیٰ اور اس میں بہتے فراواں چشمے بلند پیڑوں کے ٹھنڈے سائے …

Read More »

تماش بین

محمد حمید شاہد عورت اور خُوشبو ہمیشہ سے میری کمزوری رہے ہیں۔شاید مجھے یہ کہنا چاہیے تھا کہ عورت اور اس کی خُوشبو میری کمزوری رہے ہیں۔یہ جو‘ اَب میں عورت کو بہ غور دیکھنے یا نظر سے نظر ملا کر بات کرنے سے کتراتا ہوں تو میں شروع سے …

Read More »

سرفراز آرش کی غزلیں

Facebook تجربہ روز جسے اس کا نیا ہوتا ہے پیڑ سے پوچھیے گا راستہ کیا ہوتا ہے یاد کرتا ہوں تو یاد آتا ہے تم یاد ہی تھے چابی ملتی ہے تو صندوق کھلا ہوتا ہے آنکھ روتی ہے تو امید پنپ اٹھتی ہے پت جھڑ آتا ہے تو یہ …

Read More »